کھجل سائیں، گل خان اور عبادت کا جذبہ

Sabih Tariq

 
Super Moderator
Dynamic Brigade
Teacher
Writer
Joined
May 5, 2018
Messages
833
Likes
1,446
Points
452
Location
Central
#1

کھجل سائیں نے روزوں کی ابتداء سے ہی نماز روزہ شروع کردیا، جیسے ہی اذان ہوتی وہ سب سے اگلی صف پر بالکل امام صاحب کے پیچھے جا کر بیٹھ جاتا، چاہے اس کے لیے پہلے سے بیٹھے ہوئے نمازی حضرات کو پھلانگ کر عبور کرنا پڑتا یا دو لوگوں کے درمیان زبردستی جگہ بنانی پڑتی، اسی طرح نمازختم ہوتی تو وہ سب سے پہلے صفحوں کو چیرتاہوا مسجد سے باہر نکلتا۔
چند دن کے بعدلوگوں نےچادروں سے سر اور منہ لپیٹ کر آناشروع کردیا کیونکہ کھجل سائیں جب صفحوں کو چیرتاتو اس کا رخ کسی ایک طرف نہیں ہوتاتھااورپھر جہاں سے گزرتاکسی کو لات لگتی کسی پر ہاتھ پڑتااور کسی پر دھوتی کا رگڑادیتا اورکبھی بیٹھ کر صف کو پار کرتا۔
ایک دن کھجل سائیں کے آستانے پر مولوی صاحب حاضرہوئے۔۔۔کھجل سائیں !مولوی صاحب نے کہا’’گذارش ہے کہ دھوتی پہن کر مسجد مت آیا کریں نماز نہیں ہوتی شلوار قمیض پہنا کریں‘‘۔ کھجل سائیں حیران ہوکر کہنے لگا’’مولوی صاب! میں نے خود پڑھ کر دیکھی ہے ہوجاتی ہے‘‘ ۔مولوی صاحب سٹپٹا کر رہ گئے۔دیکھ کھجل سائیں !’’جس طرح سے تم دھوتی پہنتے ہو،تمہاری تو ہوجاتی ہوگی مگر جب سجدے میں جاتے ہوتو پچھلے نمازیوں کی نماز میں خلل پڑتاہے‘‘۔۔۔

گل خان کو جب یہ معلوم پڑاکہ کھجل سائیں رمضان المبارک میں مسجد جانے لگاہے تو اس کے اندر زبردست جوش پیداہوا،اس نے سب سے پہلے تو نسوار کو تھوکااور پھر جیب سے ڈبی نکال کر زور سے پھینکی۔
اب اس نے بھی باقاعدگی سے مسجد جانا شروع کردیا بلکہ کھجل سائیں پرسبقت لیجانے کی غرض سے مسجد کی دیگر سرگرمیوں میں بھی حصہ لینے لگا۔۔۔جب لوگ نماز پڑھ کر باہرنکلتے تو مسجد کی ٹوپیاں صفوں پر چھوڑ جاتے۔۔۔ گل خان ساری ٹوپیاں اکٹھی کرکے واپس مخصوص جگہ پر رکھ دیتا۔تیسرے چوتھے روز کھجل سائیں ظہر کی نمازکے لیے دیر سے مسجد پہنچا تو کیا دیکھتا ہے مسجد کی انتظامیہ کی گل خان سے سخت کلامی ہورہی ہےکھجل سائیں پاس گیا اور گل خان سے پوچھا "کیا بات ہےخان صاب ؟ مسجد میں اس قدرشور شرابہ کیوں کر رکھا ہے"؟گل خان: او خوچہ یہ لوگ ام کو مسجد کا خدمت نئیں کرنے دیتا۔۔۔ ام ان کا وقت بچاتا اے۔۔ اور یہ لوگ ام کو صفیں اکٹھی کرنے سے روکتا ہے۔۔یہ لوگ سارا ثواب اکیلے لینا چاہتا اے۔کھجل سائیں نے دوسرے لوگوں کی طرف سوالیہ نظروں سے دیکھا تو جواب ملاباباکھجل سائیں !’’لوگوں نے شکایت کرتے ہوئے کہا‘‘ہم سب روزے کی حالت میں نماز سے پہلے مسجد میں صفیں بچھاتے ہیں۔۔ اورگل خان نیکی کی نیت سے نماز کے فوری بعد صفیں اٹھا کر واپس اسی جگہ رکھ دیتا ہے،کیاآپ کے پاس کوئی حل ہے؟۔
کھجل سائیں نےکہا ’’ وہ لوگ پریشان نہ ہوں وہ اس کاکوئی مستقل حل سوچ لے گا‘‘۔
کھجل سائیں نے یہ حل نکالاکہ اس نے اپنے مریدوں سمیت ہر نماز کے بعد ساری صفوں کے ایک ایک کونے پر سو سو رکعتیں پڑھنے کا حکم دے دیا۔حسب معمول نماز کے بعد گل خان مسجد کی چٹائیاں لپیٹنے کے انتظار میں فارغ بیٹھارہتاکہ کب نمازی سنتوں اور نوافل سے فارغ ہوتے ہیں لیکن وہ ہر دو رکعتوں کے بعد نیت باندھ لیتے تووہ بڑا مایوس ہواکہ کھجل سائیں اور اس کے مرید ثواب میں اس پر سبقت لےجارہے ہیں۔۔۔۔پھر اس نے ایک ترکیب سوچی ۔۔۔
گل خان مسجد میں اونچی آواز میں نعتیں اور حمد پڑھنا شروع کردیتا۔۔۔۔دوسرے دن نمازیوں نے عصر کی نماز کے بعد کھجل سائیں کے گرد حلقہ بنالیا۔ان میں سے ایک شخص نے کھجل سائیں سے کہا’’آپ گل خان کو سمجھائیں کہ لوگ عبادات کررہے ہوتے ہیں کہ یہ اونچی آواز میں نعتیں پڑھتا ہے جس سے لوگوں کی عبادات میں خلل پیداہوتاہے‘‘۔گل خان بھی حلقہ میں موجود تھا،کھجل سائیں نے اس کی طرف دیکھ کر کہا’’گل خان !اگر تمیں ثواب ہی کماناہے تو مسجد میں اورکئی طرح کے کام ہوتے ہیں تم ان میں سے کچھ کام اپنے ذمہ لے لو ،روزوں کا مہینہ ہے نمازیوں کی خدمت سے تمیں دوہرا ثواب ملے گا‘‘۔گل خان نے حامی بھر لی کیونکہ اسے کھجل سائیں سے سبقت لیجانے کے لیے ہر طرح کاکام کرنامنظور تھا۔گل خان سوچ لوکہ جو ذمہ داری تم پر ڈالی جائے گی وہ کرلیاکرو گے؟کھجل سائیں نے اسے پکاکرنے کی غرض سے کہاگل خان نے سینے پر ہاتھ مارتے ہوئے کہا’’خوچہ گل خان کی ایک ہی زبان ہوتا ہےاورام کو جرگے میں یہ بات منظور ہے‘‘۔وہاں کوئی جرگہ نہیں تھا بلکہ وہ مسجد میں حلقہ بناکر بیٹھے ہوئے نمازیوں کا عام مجمع تھا جسے گل خان نے جرگہ سمجھا۔ٹھیک ہے گل خان!آج سے تم مسجد کے باتھ روم صاف کیاکرو گے اور لوگوں کی جوتیوں کو ایک ترتیب سے رکھنا تمہارا کام ہوگا،تمہاری ڈیوٹی میں یہ بھی شامل ہوگاکہ نمازیوں کی جوتیاں گڈمڈ اور چوری بھی نہ ہوں ۔کھجل سائیں نے کہاتو نمازیوں کا حلقہ تو بہت خوش ہوا،لیکن گل خان کےچہرہ بجھ کر رہ گیا ،اب اسے ایسا ہی کرنا تھاکیونکہ وہ اپنی زبان
کی وجہ سے سوچے سمجھے بغیر اپنی جان کو پھنسا چکاتھا۔۔۔۔


اگر نیت صاف ہو تویہ بھی بڑی نیکی ہےکہ نمازیوں کے جوتے چوری نہ ہوں اور باتھ روم صاف ستھرے رہیں۔​

پلیز نوٹ اس کہانی میں بعض خیالات اے ایم کے بھی شامل ہیں۔۔
 

Abu Dujana

 
Advisor
Designer
Teacher
Writer
Joined
Apr 25, 2018
Messages
464
Likes
490
Points
182
Location
Karachi, Pakistan
#5
ہاہاہاہا۔۔
کھجل سائیں اور گل خان جیسے دو متضاد کرداروں کو ایک کہانی میں لانا بہت مشکل کام ہے۔ کہ نہ تو کھجل سائیں کسی کی بات سمجھتا ہے اور نہ ہی گل خان کو کوئی سمجھا سکتا ہے۔ پھر ایسے میں دونوں کو ایک دوسرے سے سبقت میں ٹکرانا جوئے شیر لانے کے برابر ہے۔
اس کے باوجود دو نوں کرداروں کو ان کے "صفات" کے ساتھ بیان کرنے سے اس کہانی کے لطف میں اضافہ ہوا ہے۔
۔
پر مزاح تحریر شئیر کرنے کا شکریہ۔۔
:)
 

Sabih Tariq

 
Super Moderator
Dynamic Brigade
Teacher
Writer
Joined
May 5, 2018
Messages
833
Likes
1,446
Points
452
Location
Central
#8
ہاہاہاہا۔۔
کھجل سائیں اور گل خان جیسے دو متضاد کرداروں کو ایک کہانی میں لانا بہت مشکل کام ہے۔ کہ نہ تو کھجل سائیں کسی کی بات سمجھتا ہے اور نہ ہی گل خان کو کوئی سمجھا سکتا ہے۔ پھر ایسے میں دونوں کو ایک دوسرے سے سبقت میں ٹکرانا جوئے شیر لانے کے برابر ہے۔
اس کے باوجود دو نوں کرداروں کو ان کے "صفات" کے ساتھ بیان کرنے سے اس کہانی کے لطف میں اضافہ ہوا ہے۔
۔
پر مزاح تحریر شئیر کرنے کا شکریہ۔۔
:)
پسند اور تجزیہ کا شکریہ شاہ جی۔آپ کے جامع کمنٹس بہت عمدہ ہوتے ہیں جن سے حوصلہ افزائی ملتی ہے۔ شکراً
 

ناعمہ وقار

 
Super Star
Contest Winner
Dynamic Brigade
Joined
May 8, 2018
Messages
608
Likes
726
Points
337
Location
Islamabad
#10
کھجل سائیں کا نعرہ مار کر آپ بھی کھجل سائیں کی مریدنی ہوگئی ہیں
:pagal:
جی نہیں ہم تو بس ٹرائی کر رہے تھے کہ یہ نعرہ لگانے سے آپ مریدوں کو کھجل سائیں کی کونسی شکتیاں ملتی ہیں
:pagal:
لیکن ہمیں تو کوئی فائدہ نہیں ہوا، مطلب یہ ہوا کہ ان شکتیوں کے حصول کے لیئے باقاعدہ کھجل سائیں کے آستانے پر رجسٹرڈ ہونا پڑتا ہے
:pagal::pagal::pagal:
 

Sabih Tariq

 
Super Moderator
Dynamic Brigade
Teacher
Writer
Joined
May 5, 2018
Messages
833
Likes
1,446
Points
452
Location
Central
#14
جی نہیں ہم تو بس ٹرائی کر رہے تھے کہ یہ نعرہ لگانے سے آپ مریدوں کو کھجل سائیں کی کونسی شکتیاں ملتی ہیں
:pagal:
لیکن ہمیں تو کوئی فائدہ نہیں ہوا، مطلب یہ ہوا کہ ان شکتیوں کے حصول کے لیئے باقاعدہ کھجل سائیں کے آستانے پر رجسٹرڈ ہونا پڑتا ہے
:pagal::pagal::pagal:
شکر ہے آپ کو نقصان نہیں ہوا
:pagal:
یہی فائدہ ہے
 

Derwaish

 
VIP Member
Writer
Joined
May 18, 2018
Messages
93
Likes
141
Points
40
Location
Bruxelles
#17
میں نے ابھی بتایا تو ہے کی بس ٹرائی کر رہی تھی
شکر کریں آپ نے صرف ٹرائی ہی کی ہے اور آپ کو کوئی نقصان نہیں ہوا
اگر آپ نے سائیں کے آسنتے پے جانے کا سوچا ہی لیا ہے تو ایک بار حاضری ضرور دیجے گا
اس کے بعد آپ کو ایک ایسی شکتی سائیں سے ملے گئی کہ آپ کو اس شکتی کے ملنے کا احساس ہو نہ ہو
باقی لوگوں کو ہو جائے گا
:pagal::pagal::pagal:
 

Sabih Tariq

 
Super Moderator
Dynamic Brigade
Teacher
Writer
Joined
May 5, 2018
Messages
833
Likes
1,446
Points
452
Location
Central
#18
:pagal:
ٹھیک کہا آپ نے
شکر کریں آپ نے صرف ٹرائی ہی کی ہے اور آپ کو کوئی نقصان نہیں ہوا
اگر آپ نے سائیں کے آسنتے پے جانے کا سوچا ہی لیا ہے تو ایک بار حاضری ضرور دیجے گا
اس کے بعد آپ کو ایک ایسی شکتی سائیں سے ملے گئی کہ آپ کو اس شکتی کے ملنے کا احساس ہو نہ ہو
باقی لوگوں کو ہو جائے گا
:pagal::pagal::pagal:
ان کا نعرہ کھجل سائیں نے سن لیاتھا پھر اس نے حکم دیاکہ انہیں پکڑ کر حاضر کیاجائے، چنانچہ کھجل سائیں نے نعرے کی پاداش میں ان کے سپرد ایک مشن کیا جس کی ہولناک تفصیلات منظرعام پر آئیں گی۔
:pagal:
 

ناعمہ وقار

 
Super Star
Contest Winner
Dynamic Brigade
Joined
May 8, 2018
Messages
608
Likes
726
Points
337
Location
Islamabad
#19
شکر کریں آپ نے صرف ٹرائی ہی کی ہے اور آپ کو کوئی نقصان نہیں ہوا
اگر آپ نے سائیں کے آسنتے پے جانے کا سوچا ہی لیا ہے تو ایک بار حاضری ضرور دیجے گا
اس کے بعد آپ کو ایک ایسی شکتی سائیں سے ملے گئی کہ آپ کو اس شکتی کے ملنے کا احساس ہو نہ ہو
باقی لوگوں کو ہو جائے گا
:pagal::pagal::pagal:
جی نہیں مجھے آپکے کھجل سائیں کے آستانے پہ جانے کی کوئی ضرورت نہیں ہے، میں اپنے گرو جی کے معاملے میں خودکفیل ہوں، مجھے کوئی شکتی بھی نہیں چاہیئے
:mad::hathora:
 

ناعمہ وقار

 
Super Star
Contest Winner
Dynamic Brigade
Joined
May 8, 2018
Messages
608
Likes
726
Points
337
Location
Islamabad
#20
ان کا نعرہ کھجل سائیں نے سن لیاتھا پھر اس نے حکم دیاکہ انہیں پکڑ کر حاضر کیاجائے، چنانچہ کھجل سائیں نے نعرے کی پاداش میں ان کے سپرد ایک مشن کیا جس کی ہولناک تفصیلات منظرعام پر آئیں گی۔
:pagal:
صبیح بھائی یہ جو آپ باقی سب سے پنگے لے رہے ہیں بس وہی ٹھیک ہیں، میں نے کیا کِیا ہے جو اب میر ی شامت لانا چاہتے ہیں
:maro:
 
Top