الیکٹرونکس کے متعلق بنیادی معلومات قسط چہارم

Afzal339

 
Advisor
Dynamic Brigade
Expert
Teacher
Writer
Joined
Apr 25, 2018
Messages
385
Likes
475
Points
227
#1
تمام آئی ٹی درسگاہ ممبران کو محمد افضل کا سلام
دوستو آج الیکٹرونکس کے متعلق بنیادی معلومات قسط چہارم کے ساتھ حاضر ہوں

دوستو
سولڈر وائر،سولڈر آئرن اور ملٹی میٹر کے بعد اب کمپیوٹر،سیل فون اور الیکٹرونکس ہارڈ میں استعمال ہونے والی وولٹیج ریگولیٹر پاور سپلائی کی بات ہوگی
وولٹیج ریگولیٹر پاور سپلائی دو طرح کی ہوتی ہے
اے سی ٹو اے سی
اے سی ٹو اے سی پاور سپلائی ان پٹ (230) وولٹ اور آؤٹ پٹ ایک وولٹ سے ہزاروں تک بھی ہوتی ہے،آؤٹ پٹ میں ایمپئرایک ملی سے لیکر ہزاروں ملی ایمپئر تک ہوتی ہے اور چونکہ یہ سپلائی ہمارے کام میں استعمال نہیں ہوتی تو اس سے متعلق بات بھی نہیں ہوگی
اے سی ٹو ڈی سی
اے سی ٹو ڈی سی پاور سپلائی یہ سپلائی عام طور پران پٹ (230) وولٹ سے آؤٹ پٹ ڈی سی ایک وولٹ سے بارہ، پندرہ، اٹھارہ اور چو بیس وولٹ تک ہوتی ہے، ایمپئر میں دو ہزار ملی ایمپئر سے لیکر پندرہ ہزار ملی ایمپئر اور اس سے بھی زیادہ تک ہوتی ہے اور چونکہ یہ ہمارے کام میں ضروری ہوتی ہے تو اس پر تھوڑی سے بات ہوگی
کمپیوٹر ہارڈ وئیر ہو، یا سیل فون ہارڈ وئیرہویا الیکٹرونکس کی دیگر آلات کی ریپئرنگ ہو اس میں پاور سپلائی کا استعمال بہت اہم ہے۔پاور سپلائی ایسی چیز ہے کہ اس سے آلات کو پاوردینے کے ساتھ ساتھ اس سے ڈیڈ آلات کا بھی پتہ چلایا جاسکتا ہے
مثلا ایک آلہ ہے جو ڈیڈ ہے تو جب آپ اسے پاور سپلائی سے کنکٹ کریں گے تو پاور سپلائی میں موجود بزربیف دینا شروع ہوجائے گا جس سے یہ معلوم ہوجائے گا کہ کنکٹ آلہ خراب ہے
پاور سپلائی وولٹیج ریگولیٹر ہوتی ہے تو اس میں ہر آلے کے حساب سے وولٹ کم یا زیادہ کرنے کی بھی سہولت ہوتی ہے مثلا:ایک صحیح سیل فون تین اعشاریہ ساٹ وولٹ پر آن ہوجاتا ہے تو اس سے جب آپ سیل فون آن کریں گے تو اسے تین اعشاریہ سات وولٹ پر سیٹ کریں اگر سیل فون بہت ہی پرانا ہے تو پھر اس کے لیے تھوڑے سے وولٹ بڑھانے پڑیں گے یعنی زیادہ سے زیادہ پانچ وولٹ تک پاور سپلائی کو سیٹ کرنا پڑے گا پانچ وولٹ سے زیادہ پاور سپلائی کو آگے نہ سیٹ کریں کیوں اس سے سیل فون ڈیڈ ہوجائے گا اسی طرح الیکٹرونکس آلات جو کہ اکثر بارہ وولٹ کے ہوتے ہیں انہیں چیک کرنے کے لیے پاور سپلائی کو بارہ وولٹ پر سیٹ کریں۔ہر آلے پر وولٹ درسج ہوتے ہیں اسی کے مطابق وولٹ کی سیٹنگ کریں ۔
پاور سپلائی کا استعمال وہاں کیا جاتا ہے جہاں ہمیں اندازہ ہو کہ خراب آلے کے پاور سیکشن میں مسئلہ ہے اور پاور سپلائی کو متبادل پاور کے طور پر استعمال کرنے کی ضرورت ہو مثلا سیل فون کی بیٹری ڈیڈ ہے کہ نہیں تو اگر سیل فون بیٹری پر آن نہیں ہوتا اور پاور سپلائی پر ہوجاتا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ سیل فون باقی ٹھیک ہے لیکن بیٹری خراب ہے اسی طرح کوئی اور الیکٹرونکس آلہ ہے جس کا پاور خراب نہیں یا نہیں یا خراب تو نہیں لیکن پوری طرح کام کرتا ہے یا نہیں اس کا پتہ بھی پاور سپلائی سے چلایا جاسکتا ہے وہ اس طرح کہ جب آپ اس آلے کو(جس کے پاور سیکشن پر آپ کو شک ہے)پاور سپلائی سے کنکٹ کریں اور وہ آن ہوجائے تو سمجھیں کہ اس آلے کا پاور سیکشن خراب ہے کیوں کہ بعض اوقات پاور سیکشن ملٹی پر صحیح شو ہوتے ہیں لیکن آلات کو آن نہیں کرپاتے ایسے آلات کا پاور سپلائی کے ذریعے صحیح اور خراب ہونا معلوم ہوجاتا ہے
استعمال کا طریقہ
اے سی ٹو ڈی سی وولٹیج ریگولیٹر پاور سپلائی میں دو پراب ہوتے ہیں
ایک منفی اور دوسرا مثبت ہوتا ہے
منفی پراب بلیک کلر کا ہوتا ہے اور مثبت پراب ریڈ کلر کا ہوتا ہے

سب سے پہلے آلے کے مطابق وولٹ کی سیٹنگ کریں اور اس کے بعد منفی پراب کو کسی بھی آلے کے منفی جگہ اور مثبت پراب کو مثبت جگہ پررکھیں یاد رہے کہ وولٹیج کی سیٹنگ پہلے کرنی ہے پراب کنکٹنگ کے بعد وولٹیج کی سیٹنگ آلے کے لیے خطرناک ثابت ہوسکتے ہیں اور کنکٹ آلہ جل بھی سکتا ہے
آلہ کنکٹ ہونے کے بعد آلے کو آن کریں اگر آلہ آن نہیں ہوتا ہے تو پھر اس کا مطلب ہے کہ آلے کے پاور سیکشن میں خرابی ہے
جاری ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 
Top