سمارٹ فون خریدنے سے پہلے اس کو ضرور پڑھیں قسط دوم

Afzal339

 
Advisor
Dynamic Brigade
Expert
Teacher
Writer
Joined
Apr 25, 2018
Messages
385
Likes
476
Points
227
#1
تمام آئی ٹی درسگاہ ممبران کو محمد افضل کا سلام
دوستو آج حاضر ہوں دوسرے قسط کے ساتھ تو چلے کام کی بات کی طرف
ہارڈوئیر فیچرز میں دوسرے نمبر پر کیمرے کا بھی خاص خیال رکھیں
:سمارٹ فون رئیر کیمرا
ہارڈ وئیر فیچرز میں دوسرے نمبر پر کیمرا کوالٹی کا خیال رکھا جائے ۔ کیوں کہ سمارٹ فون کیمرا بہت مفید فیچر ہے اس سے آپ فوٹو شوٹنگ کے علاوہ سکیننگ کا کام بھی لے سکتے ہیں ۔
مثلا کوئی مہنگی کتاب ہے جسے کتاب مالک یا لائبریری والے نہیں دینا چاہتے ہیں ۔تو آپ ان کی اجازت سے تھوڑی دیر میں سمارٹ فون کیمرا کے ذریعے اس کی امیجزفائل بناکر بعد میں اس کی پی ڈی ایف بک بناسکتے ہیں۔
اس ہارڈ وئیر فیچر کے سینکڑوں فوائد اور بھی ہے جنہیں یہاں نقل کرنا مضمون کی طوالت کے خوف سے ترک کررہاہوں
:فرنٹ کیمرا
عام طور پر یہ بیک کیمرے سے کم میگا پکسل کا حامل ہوتا ہے جو سیلفی اور ویڈیو کالنگ میں استعمال ہوتا ہے ویڈیو کالنگ والوں کے لیے تو اس کا ہونا سمجھ میں آتا ہے
:کیمرا پکسل
پکسل ، پکچر ایلیمنٹ کسی بھی ڈیجیٹل تصویر کےسب سے چھوٹے سے حصے کو کہاجاتاہے ۔ایک میگا پکسل میں ایک ملین پکسل ہوتے ہیں ۔جتنے زیادہ پکسل والا کیمرا ہوگا تصویر اتنی ہی صاف ستھری ہوگی ۔
:کیمرے کے میگا پکسل معلوم کرنے کا فارمولہ
اس کے کئی طریقے ہیں جن میں ایک کیمرے کے اوپر لکھا ہونا ہے کہ کتنے میگا پکسل کاحامل کیمرا ہے۔ نمبر دو نیٹ سے بھی معلوم کیا جاسکتا ہے لیکن ۔۔۔
میں جو فارمولہ بتاؤں گا اس سے آپ نہ صرف کیمرے کے میگا پکسل معلوم کرسکیں گے
بلکہ کسی بھی تصویر کے بارے میں یہ بھی معلوم کرسکیں گے کہ یہ تصویر کتنے میگا پکسل کیمرے سے شوٹ کی گئی ہے ۔
فارمولہ یہ ہے کہ سب سے پہلے کیمرے سے فل ریزولیشن کے ساتھ (یاد رہے کہ فل ریزولیوشن کیمرا سیٹنگ میں جاکر پہلے سیٹ کریں ) تصویر شوٹ کریں ۔ پھر تصویر پر کلک کرکے اس کی ڈیٹیل میں جائے وہاں سے تصویر کی چوڑائی اور لمبائی جو تصویر کے ساتھ ہی درج ہوگی معلوم کریں
پھر ان کو آپس میں ضرب دیں جو نتیجہ نکلے گا اس کو دس لاکھ پر تقسیم کریں اب آخر میں جو نتیجہ نکلے گا وہی کیمرے کے پکسل ہوں گے
ریم
ہارڈ وئیر فیچرز میں تیسرے نمبر پر ریم کا خیال رکھا جائے
ریم جو
random access memory
کا مخفف ہے پرائمری یاداشت کا ایک آلہ ہے جس میں ڈیٹا اور ہدایات عارضی طور پر محفوظ ہوتی ہیں۔
نیز ریم میں موجود مواد کو بقدر ضرورت تبدیل یا حذف بھی آسانی کے ساتھ کیا جا سکتا ہے۔
ریم ایک عارضی میموری ہوتی ہے یعنی اگر کام کرتے ہوتے کسی بھی وجہ سے سیل فون آف ہوگیا یا آپ نے آف کردیا تو اس میں جتنا بھی ڈیٹا ہوگا وہ سارا ضائع ہوجائے گا
کیوں کہ ریم مستقل میموری نہیں ہے ریم کی پیمائش کلو بائٹس یا میگا بائٹس میں ہوتی ہے جس کی ترتیب درج ذیل ہے
ایک ہزار چوبیس بائٹس ایک کلو بائٹس ہوتے ہیں
ایک ہزار چوبیس کلو بائٹس ایک میگا بائٹس ہوتے ہیں
ایک ہزار چوبیس میگا بائٹس ایک گیگا بائٹس ہوتے ہیں
گیگا بائٹس کا مخفف جی بی ہے
سیل فون میں کام کرتے وقت ایپس کا تیزی سے کھلنا ، سرچ براؤزر میں ایک ساتھ کئی ٹیب اوپن ہونا، سیل فون کا ہینگ نہ ہونا اور آپریٹنگ سسٹم کا تیزی سے چلنا یہ سارے کمالات دراصل زیادہ ریم کے حامل سیل فون میں ہی ممکن ہے
اگر سیل فون خریدتے وقت زیادہ ریم کے حامل سیل فون کا انتخاب کیا جائے تو یقینا آپ مذکورہ کمالات سے فائدہ اٹھاسکتے ہیں ۔
اور یہ کم ازکم ریم دو جی بی ہونی چاہیے
:پروسیسر
ہارڈ وئیر فیچرز میں ریم کے بعد پروسیسر کا خیال رکھا جائے
پروسیسر جو کمپیوٹر اور سمارٹ فون ٹیکنالوجی میں دماغ کی حیثیت رکھتا ہے ۔ اب انسانی جسم میں دماغ جو کام کرتا ہے وہی کام ان ٹیکنالوجیز میں پروسیسر کرتا ہے
یہ ان پٹ سے دی گئی ہدایات کے مطابق پروسیسنکگ اور مینوپولیٹ کر کے اس کا رزلٹ ہمیں سکرین پر دیکھا تا ہے۔
پروسیسر کو اس کی کلاک سپیڈ سے مانبا جاتا ہے جو کہ ہرٹز میں ہوتی ہے۔ ہرٹز زیادہ ہونے کی صورت میں اس کو مائیکرو ہرٹز یا گیکگا ہرٹز میں پکارا جاتا ہے۔
ہمارے زمانے کے سمارٹ فون میں عام پروسیسر ایک اعشاریہ ایک یا دو یا تین گیگا ہرٹز سے شروع ہوتا ہے
اور مختلف سیل فون میں مختلف ہوتا ہے نیز اس کی بھی بہت ساری قسمیں ہیں جن میں سے کچھ یہ ہیں
ڈوئل کور
کورٹو ڈیو
کورٹوکواڈ
اوکٹا کور
وغیرہ
ہمارے زمانے کے نارمل اور عام سمارٹ فون میں ڈوئل کور پروسیسر ہوتا ہے ڈوئل کور پروسیسر ویسے تو عام پروسیسر سے کافی طاقتور ہوتا ہے
کیوں کہ ڈوئل کور پروسیسر پیکیجنگ میں ایک سے زیادہ کورز ہوتی ہے اور ہر کور بذات خود ایک مکمل پروسیسر ہوتا ہے اور اس کی اپنی کیشے میموری بھی ہوتی ہے
لیکن پروسیسرز کے مقابلے یہ ابھی پرانی ٹیکنالوجی ہوگئی ہے اس لیے کم ازکم کی حد تک تو ٹھیک ہے لیکن اس سے آگے باقی ٹیکنالوجی بہتر ہے
یاد رہے کہ سمارٹ فون کی سپیڈ میں جہاں بڑی ریم ضروری ہے وہاں بڑے پروسیسر کی بھی ضرورت رہتی ہے یعنی ایک ایسے سمارٹ فون کا انتخاب کیا جائے کہ جس میں
پروسیسر ایک اعشاریہ سات گیگا ہرٹز ہو
جاری ہے۔۔۔۔۔۔​
 
Top